انسانی کہانیاں عالمی تناظر

میانمار

میانمار میں اندرون ملک نقل مکانی پر مجبور افراد کا ایک کیمپ۔
© UNICEF/Brown

میانمار: اوچا کی ہنگامی فنڈ سے بے گھر شہریوں کی مدد

ہنگامی امدادی امور کے لیے اقوام متحدہ کے رابطہ کار مارٹن گرفتھس نے میانمار میں جنگ کے نتیجے میں بے گھر ہونے والے شہریوں کی مدد کے لیے ہنگامی اقدامات کے مرکزی فنڈ (سی ای آر ایف) سے 7 ملین ڈالر مختص کیے ہیں۔

پناہ کے متلاشی روہنگیا افراد کی کشتی جزائر انڈیمان میں انڈونیشیا کے ساحل کے قریب کھڑی ہے (فائل فوٹو)۔
© UNHCR/Kenzie Eagan

پناہ کے متلاشی روہنگیاوں کی سمندروں میں جان بچائی جائے، یو این ماہر

میانمار میں انسانی حقوق کی صورتحال پر اقوام متحدہ کے خصوصی اطلاع کار ٹام اینڈریوز نے بنگلہ دیش سے روہنگیا پناہ گزینوں کی انڈونیشیا آمد پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ان کی ہنگامی مدد پر زور دیا ہے۔

میا نمار کے منڈالے ریجن کا ایک شہر باگان۔
Unsplash/Ajay Karpur

میانمار: فوج اور مخالفین شہری حقوق کا خیال رکھیں

اقوام متحدہ کے دفتر برائے انسانی حقوق (او ایچ سی ایچ آر) نے میانمار میں فوج اور اس کے مخالف گروہوں پر زور دیا ہے کہ وہ بین الاقوامی قانون کی پاسداری کرتے ہوئے شہریوں کا تحفظ یقینی بنائیں۔

میانمار کا خاندان محفوظ پناہ گاہ کی تلاش میں تھائی لینڈ پہنچنے کی کوشش کر رہا ہے۔
UNOCHA/Siegfried Modola

میانمار: جنگی جرائم میں تیزی سے اضافہ، انسانی حقوق تفتیش کار

انسانی حقوق کے بارے میں اقوام متحدہ کے مقرر کردہ غیرجانبدار تفتیش کاروں کا کہنا ہے کہ میانمار کے لوگ ملک کی فوج کے ہاتھوں ہولناک جرائم سے بری طرح متاثر ہو رہے ہیں جبکہ تشدد بڑھتا جا رہا ہے۔

شمالی میانمار میں دو سپاہی ایک فوجی چوکی پر ڈیوٹی دیتے ہوئے۔
IRIN/Steve Sandford

میانمار میں بڑھتے ہوئے جنگی جرائم کے واضع ثبوت موجود: رپورٹ

میانمار کے لیے غیرجانبار تحقیقاتی طریقہ کار (آئی آئی ایم ایم) ملک کی فوج اور اس سے منسلک ملیشیاؤں کے جنگی جرائم اور انسانیت کے خلاف جرائم میں مزید تیزی اور دیدہ دلیری کے ساتھ ملوث ہونے کی موثر شہادت سامنے لایا ہے۔

جنوری 2022 میں ایک ماں اپنی ایک سالہ بچی کے ساتھ ایک ہفتے پیدل مسافت طے کر کے میانمار کی مشرقی ریاست کیا (کرینی) کے راستے تھائی لینڈ کی سرحد پر پہنچی ہیں۔
© UNOCHA/Siegfried Modola

میانمار میں جبر اور ظلم کا خاتمہ ہونا چاہیے: وولکر ترک

اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق وولکر تُرک نے انسانی حقوق کونسل کو بتایا ہے کہ میانمار میں حکومت کی جانب سے شہریوں کے خلاف سفاکانہ تشدد اور تحفظِ زندگی کے لیے امداد مہیا کرنے کی اجازت نہ دینے سے انسانیت کی کلی توہین کی عکاسی ہوتی ہے۔

میانمار کے ایک گاؤں میں خاتون اقوام متحدہ کی طرف سے ملنے والی کھاد کی بوری لے کر جا رہی ہے۔
© FAO/Hkun Lat

میانمار: انسانی امداد میں رکاوٹیں عالمی قوانین کی خلاف ورزی

اقوام متحدہ کے دفتر برائے انسانی حقوق (او ایچ سی ایچ آر) کی نئی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ میانمار کی فوج شہریوں کو ہلاک کر رہی ہے، خوراک اور گھروں کو تباہ کرنے میں لگی ہے اور انتہائی بدحال لوگوں کو تحفظ زندگی کے لئے درکار امداد کی وصولی سے روک رہی ہے۔

راخائن میں اندرون ملک مہاجر ہونے والے افراد کےطوفان موچا میں  تباہ ہونے والے ایک کیمپ کا منظر۔
© UNOCHA/Pierre Lorioux

میانمار: راخائن کو بھوک اور بیماریوں سے بچانے کی فوری ضرورت

اقوام متحدہ نے کہا ہےکہ میانمار میں تباہ کن سمندری طوفان موچا کی آمد سے دو ہفتے کے بعد بھی ضرورت مند لوگوں کی امداد تک رسائی غیریقینی ہے، بیماریاں پھیل رہی ہیں اور ایک بڑے غذائی بحران کا حقیقی خطرہ موجود ہے۔

راخائن میں طوفان موچا سے متاثر ہونے والا ایک کنبہ اپنی جھونپڑی مرمت کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔
© UNOCHA/Pierre Lorioux

طوفان موچا: بھوک اور بیماریوں سے نمٹنے کے لیے فوری مدد کی ضرورت

میانمار اور بنگلہ دیش میں سمندری طوفان موچا سے ہونے والی تباہی کی واضح تفصیل سامنے آ رہی ہے۔ ان حالات میں امدادی ادارے تحفظ زندگی کے لئے مدد دینے میں مصروف ہیں جبکہ امدادی مالی وسائل میں فوری اضافے کی اشد ضرورت ہے۔