خواتین

یوگنڈا میں مرد اور لڑکے ایف جی ایم کے خاتمے کی جدوجہد میں شریک ہو رہے ہیں۔
© UNICEF/Henry Bongyereirwe

لڑکیوں کے جنسی اعضاء قطع کرنے کے خلاف مرد بھی آواز اٹھائیں، گوتیرش

اس سال دنیا بھر میں بیالیس لاکھ لڑکیوں کو جنسی اعضاء کی قطع یا 'ایف جی ایم' کا خطرہ لاحق ہے۔ اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتیرش نے اس عمل کو ''بنیادی انسانی حقوق کی گھناؤنی خلاف ورزی'' قرار دیا ہے۔

یونیسف کے پروگرام ’تعلیم برائے امن‘ کے تحت قیام امن کے بارے میں آگہی بڑھانے کی مہم میں شریک بچے۔
© UNICEF

قیام امن کو مشمولہ اور پائیدار ترقی کی بنیاد ہونا چاہیے، امینہ محمد

اقوام متحدہ کی نائب سیکرٹری جنرل امینہ محمد نے اقوام متحدہ کے وجود میں آنے کی اصل وجہ 'امن' کو اس کی بنیاد کے طور پر برقرار رکھنے کے لیے کہتے ہوئے سلامتی کونسل کو خبردار کیا ہے کہ ادارے کے اس مقصد کو اب ''سنگین خطرہ لاحق ہے۔''

ہلمند میں یونسیف کی مدد سے چلنے والے ایک سکول کی طالبات (فائل فوٹو)۔
© UNICEF/Mark Naftalin

تعلیم کی کایا پلٹنے کے لیے عالمگیر عزم کی ضرورت: سربراہ اقوام متحدہ

تعلیم کے عالمی دن پر اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتیرش نے کہا ہے کہ عالمی سطح پر تعلیم میں تبدیلی لانے کے لیےگزشتہ برس اقوام متحدہ کے زیراہتمام سنگ میل کی حیثیت رکھنے والی کانفرنس میں کیے گئے وعدوں پر عمل ہونا چاہیے۔

وسطیٰ افغانستان کے صوبہ وردک کا ایک سکول۔
© UNICEF/Christine Nesbitt

عالمی یوم تعلیم پر مرکز نگاہ افغان لڑکیاں اور خواتین: یونیسکو

اقوام متحدہ کے تعلیمی و ثقافتی ادارے 'یونیسکو' نے خبردار کیا ہے کہ افغانستان میں لڑکیوں اور نوجوان خواتین کو تعلیم سے روکنے کے نتیجے میں تعلیمی میدان میں حاصل کردہ بہت بڑے فوائد ضائع ہو سکتے ہیں اور ''ایک گم  شدہ'' نسل سامنے آئے گی۔

طالبان نے افغانستان پر قبضے کے بعد اپنی بنیاد پرست حکومت میں خواتین کے کردار سے متعلق کرائی گئی یقین دہانیوں کی خلاف ورزی بھی کی ہے۔
© UNICEF/Sayed Bidel

طالبان کی خواتین مخالف پالیسیوں کے خلاف سلامتی کونسل میں اتحاد ضروری

افغانستان کے لیے اقوام متحدہ کی خصوصی نمائندہ نے کہا ہے کہ سلامتی کونسل کو ملک میں خواتین اور لڑکیوں کے بنیادی حقوق ختم کرنے سے متعلق طالبان کی پالیسیوں کی مخالفت میں متحد ہونا ہو گا۔

خواتین کے این جی اوز میں کام کرنے پر پابندی سے وہ خود اور ان کے اہلخانہ آمدنی سے محروم ہو جائیں گے۔
UNAMA/Fraidoon Poya

افغانستان میں خواتین کے خلاف تباہ کن قوانین ختم ہونے چاہیں: وولکر ترک

اقوام متحدہ کے ہائی کمشنر برائے انسانی حقوق وولکر تُرک نےکہا ہے کہ افغانستان میں خواتین اور لڑکیوں کے حقوق کے لیے نقصان دہ پالیسیوں کے ان کی زندگی پر ''مسلسل خوفناک اثرات'' مرتب ہو رہے ہیں اور ان سے معاشرے کو عدم استحکام کا خطرہ ہے۔

ایک مہاجر کیمپ میں افغان بچے۔
© UNICEF/Omid Fazel

طالبان سے بات چیت جاری رہنی چاہیے: افغانستان پر خصوصی نمائندہ

افغانستان میں اقوام متحدہ کے امدادی مشن (یو این اے ایم اے) کی سربراہ روزا اوٹںبائیووا نے کہا ہے کہ طالبان حکام اور مشن کے موقف میں اختلافات کے باوجود ملک کے لوگوں کی خاطر ان میں بات چیت جاری رہنی چاہیے۔

اقوام متحدہ میں قیام امن کے ادارے کا کہنا ہے کہ خواتین کو امن کارروائیوں میں شرکت کے مساوی مواقع ملنے چاہئیں.
MINUSMA/Marco Dormino

مالی مشن کو ملنے والی گرانٹ قیام امن میں خواتین کی شمولیت بڑھائے گی

مالی میں اقوام متحدہ کے امن مشن 'مِنوسما' کے لیے 1.5 ملین ڈالر کی گرانٹ کا اعلان کیا گیا ہے جس کا مقصد ملک میں خدمات انجام دینے والی خواتین بلیو ہیلمٹس کے لیے ماحول مزید سازگار بنانا اور وہاں ان کے رہن سہن کو بہتر کرنا ہے۔