انسانی کہانیاں عالمی تناظر

ایران اسرائیل تناؤ: یو این قیادت کا انتقامی اقدامات سے پرہیز کا مطالبہ

سیکرٹری جنرل انتونیو گوتیرش نے عالمی برادری سے کہا ہے کہ وہ مشرق وسطیٰ میں بڑھتی کشیدگی روکنے کے لیے مشترکہ کوششیں کرے۔
UN Photo/Loey Felipe
سیکرٹری جنرل انتونیو گوتیرش نے عالمی برادری سے کہا ہے کہ وہ مشرق وسطیٰ میں بڑھتی کشیدگی روکنے کے لیے مشترکہ کوششیں کرے۔

ایران اسرائیل تناؤ: یو این قیادت کا انتقامی اقدامات سے پرہیز کا مطالبہ

امن اور سلامتی

ایران میں جوہری تنصیبات کے قریب اسرائیل کے مبینہ حملوں کی اطلاعات کے بعد اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتیرش نے فریقین سے انتقامی کارروائیوں کا خطرناک سلسلہ روکنے کی اپیل کو دہرایا ہے۔

سیکرٹری جنرل نے ہر طرح کے انتقامی حملوں کی مذمت کرتے ہوئے عالمی برادری سے کہا ہے کہ وہ کشیدگی میں اضافہ روکنے کے لیے متحدہ کوششیں کرے۔ مشرق وسطیٰ میں جاری حالیہ تناؤ میں اضافہ ہوتا رہا تو پورے خطے اور دنیا بھر کو اس کے تباہ کن نتائج کا سامنا ہو سکتا ہے۔

Tweet URL

اطلاعات کے مطابق اسرائیل کی جانب سے ایرانی شہر اصفہان میں مبینہ طور پر متعدد ڈرون حملے کیے گئے ہیں۔ یہ علاقہ ایران کی جوہری تنصیبات کا مرکز ہے جہاں فوجی چھاؤنیاں بھی قائم ہیں۔ فی الوقت ان حملوں میں کسی بڑے نقصان کی اطلاع موصول نہیں ہوئی۔ 

جوہری تنصیبات محفوظ

اقوام متحدہ میں جوہری توانائی کے ادارے (آئی اے ای اے) کے سربراہ رافائل گروسی نے انہی خدشات کو دہراتے ہوئے تمام فریقین سے ہرممکن تحمل اختیار کرنے کو کہا ہے۔ 

انہوں نے تصدیق کی ہے کہ اسرائیل کے مبینہ حملے میں ایران کی جوہری تنصیبات کو کسی طرح کا کوئی نقصان نہیں پہنچا۔

ایک ٹویٹ میں انہوں نے کہا ہے کہ جوہری تنصیبات کو کسی بھی طرح کے حالات میں عسکری کارروائیوں کا ہدف نہیں ہونا چاہیے۔

تحمل کی اپیل

جنیوا میں اقوام متحدہ کے دفتر برائے انسانی حقوق (او ایچ سی ایچ آر) نے تمام فریقین پر زور دیا ہے کہ وہ کشیدگی میں کمی لانے کے اقدامات اٹھائیں۔ 

ادارے کے ترجمان جیریمی لارنس نے کہا ہے کہ متحارب فریقین پر اثرورسوخ رکھنے والے ممالک کو چاہیے کہ وہ ایسے اقدامات یقینی بنائیں جن سے خطے میں جاری انتہائی خطرناک حالات کو مزید بگڑنے سے روکا جا سکے۔