انسانی کہانیاں عالمی تناظر

افغانستان

تعلیم جاری رکھنے کے لیے افغان لڑکیاں روانڈا پہنچ رہی ہیں۔
IOM/Robert Kovacs

افغانستان: صنفی عصبیت انسانیت کے خلاف جرم قرار دی جائے، یو این ماہرین

انسانی حقوق کے بارے میں اقوام متحدہ کے ماہرین نے افغانستان میں خواتین اور لڑکیوں کے حقوق کی سلبی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے صنفی عصبیت کو انسانیت کے خلاف جرم قرار دینے پر زور دیا ہے۔

سیکرٹری جنرل انتونیو گوتیرش دوحہ میں افغانستان پر منعقدہ کانفرنس سے خطاب کر رہے ہیں۔
United Nations/Khava Mukhieva

ہم سب افغانستان میں امن کے خواہاں ہیں، گوتیرش کا دوحہ میں خطاب

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتیرش نے افغان خواتین اور لڑکیوں پر پابندیوں کے فوری خاتمے کی ضرورت کو واضح کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیا کو ایسے افغانستان کی ضرورت ہے جو پُرامن ہو اور اپنی بین الاقوامی و قومی ذمہ داریوں کو پورا کرے۔

افغانستان کو عالمی ادارہِ خوراک کی طرف سے فراہم کی گئی گندم جلال آباد میں اتاری جا رہی ہے۔
© WFP/Danijela Milic

وطن لوٹنے والے افغان مہاجرین کے لیے 38 لاکھ ڈالر کی امداد

عالمی پروگرام برائے خوراک (ڈبلیو ایف پی) کو پاکستان سے افغانستان واپس آنے والے پناہ گزینوں کی مدد کے لیے اقوام متحدہ کے مرکزی امدادی فنڈ سے 38 لاکھ ڈالر فراہم کیے گئے ہیں۔ ان وسائل سے ان لوگوں کو غذائی ضروریات پوری کرنے میں مدد ملے گی۔

افغانستان میں بے گھر خواتین اقوام متحدہ کی ایک اہلکار سے ملاقات کر رہی ہیں۔
© UNOCHA/Charlotte Cans

ناکافی حجاب پر خواتین سے طالبان کی بدسلوکی پر تشویش

انسانی حقوق کے بارے میں اقوام متحدہ کے غیرجانبدار ماہرین نے افغانستان میں لباس سے متعلق قوانین کی خلاف ورزی پر خواتین اور لڑکیوں کی گرفتاریوں، قید اور ان سے بدسلوکی کے واقعات پر شدید تشویش کا اظہار کیا ہے۔

طالبات ہرات میں یونیسف کی مدد سے کام کرنے والے ایک سکول میں جون 2022 میں داخل ہو رہی ہیں۔
UNICEF / Mark Naftalin

افغان خواتین پر نا ختم ہونے والی پابندیوں کا سلسلہ جاری، یو این رپورٹ

افغانستان میں خواتین کے حقوق سلب کیے جانے کا سلسلہ جاری ہے۔ گزشتہ سال کی آخری سہ ماہی کے دوران سیکڑوں خواتین کو نوکریاں چھوڑنے پر مجبور کیا گیا، انہیں گرفتاری کا سامنا کرنا پڑا اور ضروری خدمات تک رسائی سے محروم رکھا گیا۔

یونیسکو کی خواندگی مہم کے تحت چلنے والے اداروں میں زیرتعلیم خواتین و لڑکیاں پہلی دفعہ لکھنے پڑھنے سے روشناس ہو رہی ہیں۔
© UNESCO/Navid Rahi

افغانستان کی معاشی بحالی میں خواتین کی شمولیت اہم، یو این ڈی پی

افغانستان کے لیے اقوام متحدہ کے ترقیاتی پروگرام (یو این ڈی پی) نے کہا ہے کہ اگست 2021 کے بعد ملک کو تاریک سماجی و معاشی حالات کا سامنا ہے۔ بحرانوں پر قابو پانے کے لیے خواتین کی معاشی شمولیت کو مرکزی اہمیت دینا ہو گی۔

کابل میں خواتین اور لڑکیوں کی بڑی تعداد کو لباس کے حوالے سے انتباہ جاری کیے گئے ہیں اور ان کی گرفتاریاں عمل میں آئی ہیں۔
© UNOCHA/Charlotte Cans

لباس پر طالبان کے احکامات کی عدم تعمیل پر گرفتاریوں کی مذمت

  • افغانستان میں اقوام متحدہ کے مشن (یونیما) نے طالبان حکام کی جانب سے اسلامی لباس پہننے کے حکم کی مبینہ عدم تعمیل پر خواتین اور لڑکیوں کو گرفتار اور قید کیے جانے پر گہری تشویش کا اظہار کیا ہے۔
سولہ دسمبر 2023 تک 4 لاکھ 71 ہزار سے زیادہ افغان پناہ گزین پاکستان سے واپس جا چکے تھے۔
Asim Khan

جانیے: افغان مہاجرین اور پاکستان میں پناہ گزینوں کے قوانین بارے

حکومتِ پاکستان نے ’غیرقانونی‘ طور پر مقیم تارکین وطن کو ملک چھوڑنے کا حکم دے رکھا ہے۔ 26 ستمبر کو ایسے لوگوں کے لیے یکم نومبر تک رضاکارانہ واپسی کی مہلت جاری کرتے ہوئے اعلان کیا گیا تھا کہ مقررہ مدت میں واپس نہ جانے والوں کو ملک بدر کر دیا جائے گا اور اکتیس دسمبر کے بعد انہیں 100 ڈالر ماہانہ جرمانے کا بھی سامنا ہوگا۔

افغانستان کو عالمی ادارہِ خوراک کی طرف سے فراہم کی گئی گندم جلال آباد میں اتاری جا رہی ہے۔
© WFP/Danijela Milic

افغانستان: انڈیا کی امدادی گندم سے 50 لاکھ لوگوں کو خوارک کی فراہمی

گزشتہ ڈیڑھ برس میں انڈیا کی حکومت نے افغانستان میں اقوام متحدہ کے پروگرام برائے خوراک (ڈبلیو ایف پی) کو 50 ہزار میٹرک ٹن گندم عطیہ کی ہے جس سے تقریباً 50 لاکھ ضرورت مند لوگوں کو خوراک میسر آئی۔